اسرار کے مکمل انکشاف کا باب 13

_______________________________________________________________

ظلم و ستم کے درمیان وفادار رہیں

باب 13

1 جب وہ بیت المُقدّس سے باہر نکل رہا تھا تو اُس کے شاگردوں میں سے ایک نے اُس سے کہا، ”دیکھو استاد، کیا پتھر اور کیا عمارتیں ہیں! 2 یسوع نے اس سے کہا، “کیا تم یہ عظیم عمارتیں دیکھ رہے ہو؟ ایک پتھر دوسرے پر باقی نہیں رہے گا جو گرایا نہ جائے گا۔”

3 جب وہ زیتون کے پہاڑ پر ہیکل کے سامنے بیٹھا تھا تو پطرس، جیمز، یوحنا اور اینڈریو نے اس سے رازداری میں پوچھا، 4 “ہمیں بتاؤ، یہ کب ہو گا، اور کیا نشان ہو گا جب یہ سب چیزیں ہونے والی ہیں؟ ختم ہو جائے؟” 5 یسوع نے ان سے کہنا شروع کیا، “دیکھو کہ کوئی تمہیں دھوکہ نہ دے۔ 6 بہت سے لوگ میرا نام لے کر آئیں گے، ‘میں وہ ہوں’، اور وہ بہتوں کو دھوکہ دیں گے۔ 7 جب آپ جنگوں اور جنگوں کی خبریں سنتے ہیں تو گھبرائیں نہیں۔ ایسی چیزیں ضرور ہوتی ہیں، لیکن یہ ابھی ختم نہیں ہو گا۔ 8 قوم قوم کے خلاف اور بادشاہی سلطنت کے خلاف اٹھے گی۔ جگہ جگہ زلزلے آئیں گے اور قحط پڑیں گے۔ یہ درد زہ کی شروعات ہیں۔

9 “خود کا خیال رکھیں۔ وہ آپ کو عدالتوں کے حوالے کر دیں گے۔ تمہیں عبادت گاہوں میں مارا پیٹا جائے گا۔ تم میری وجہ سے گورنروں اور بادشاہوں کے سامنے گواہی کے طور پر پیش کیے جاؤ گے۔ 10 لیکن سب سے پہلے خوشخبری کی منادی تمام اقوام کو کی جانی چاہیے۔ 11 جب وہ آپ کو دور لے جائیں اور آپ کے حوالے کریں، تو پہلے سے فکر نہ کریں کہ آپ کیا کہنا چاہتے ہیں۔ لیکن جو کچھ اس وقت تمہیں دیا جائے گا وہ کہو۔ کیونکہ بات کرنے والے تم نہیں بلکہ روح القدس ہو گے۔ 12 بھائی بھائی کو موت کے حوالے کرے گا اور باپ اپنے بچے کو۔ بچے والدین کے خلاف اٹھیں گے اور انہیں موت کے گھاٹ اتار دیں گے۔ 13 میرے نام کی وجہ سے تم سے سب نفرت کریں گے۔ لیکن جو آخر تک ثابت قدم رہے گا وہ نجات پائے گا۔

14 “جب تم ویران گھناؤنی چیز کو وہاں کھڑے دیکھتے ہو جہاں اسے نہیں ہونا چاہیے (قارئین کو سمجھنا چاہیے)، تو یہودیہ میں رہنے والوں کو پہاڑوں کی طرف بھاگنا چاہیے، 15 [اور] گھر کی چھت پر بیٹھنے والے کو نیچے نہیں جانا چاہیے اور نہ ہی اندر سے کچھ نکالنا چاہیے۔ اس کے گھر، 16 اور کھیت میں موجود شخص کو اپنی چادر لینے کے لیے واپس نہیں آنا چاہیے۔ 17 ان دنوں میں حاملہ عورتوں اور دودھ پلانے والی ماؤں کے لیے افسوس۔ 18 دعا کریں کہ سردیوں میں ایسا نہ ہو۔ 19 کیونکہ اُن وقتوں میں ایسی مصیبتیں آئیں گی جو خدا کی تخلیق کے آغاز سے لے کر آج تک نہ آئی ہیں اور نہ کبھی ہوں گی۔ 20 اگر خُداوند اُن دنوں کو چھوٹا نہ کرتا تو کوئی بھی نہ بچتا۔ لیکن چنے ہوئے لوگوں کی خاطر جن کو اس نے چن لیا، اس نے دن کم کر دئیے۔ 21 اگر کوئی آپ سے کہے، ‘دیکھو، مسیحا یہاں ہے! دیکھو، وہ وہاں ہے! اس پر یقین نہ کریں۔ 22 جھوٹے مسیحا اور جھوٹے نبی پیدا ہوں گے اور اگر یہ ممکن تھا تو چنے ہوئے لوگوں کو گمراہ کرنے کے لیے نشانیاں اور عجائبات دکھائیں گے۔ 23 ہوشیار رہو! میں نے یہ سب تمہیں پہلے ہی بتا دیا ہے۔

24 لیکن اس مصیبت کے بعد کے دنوں میں

سورج اندھیرا ہو جائے گا،

اور چاند اپنی روشنی نہیں دے گا،

25 اور ستارے آسمان سے گریں گے۔

اور آسمان کی طاقتیں ہل جائیں گی۔

26 اور پھر وہ ‘ابن آدم کو بادلوں پر آتے ہوئے’ بڑی طاقت اور جلال کے ساتھ دیکھیں گے، 27 اور پھر وہ فرشتوں کو بھیجے گا اور زمین کے آخر سے لے کر آخر تک چاروں ہواؤں سے چنے ہوئے لوگوں کو جمع کرے گا۔ آسمان کی

28 “انجیر کے درخت سے سبق سیکھیں۔ جب اس کی شاخ نرم ہو جاتی ہے اور پتے پھوٹ پڑتے ہیں تو تم جانتے ہو کہ موسم گرما قریب ہے۔ 29 اسی طرح جب تم یہ چیزیں ہوتے دیکھو تو جان لو کہ وہ قریب ہے، دروازے پر ہے۔ 30آمین، میں تم سے کہتا ہوں کہ یہ نسل تب تک ختم نہیں ہو گی جب تک یہ سب کچھ نہ ہو جائے۔ 31 آسمان اور زمین ٹل جائیں گے، لیکن میری باتیں ختم نہیں ہوں گی۔

32 “لیکن اس دن یا گھڑی کے بارے میں کوئی نہیں جانتا، نہ آسمان کے فرشتے، نہ بیٹا، مگر صرف باپ۔ 33 ہوشیار رہو! ہوشیار رہنا! پتہ نہیں وہ وقت کب آئے گا۔ 34 یہ ایک آدمی کی طرح ہے جو بیرون ملک سفر کرتا ہے۔ وہ گھر سے نکلتا ہے اور اپنے نوکروں کو، ہر ایک کو اس کا کام سونپ دیتا ہے، اور دربان کو چوکس رہنے کا حکم دیتا ہے۔ 35 دیکھو، لہذا؛ تم نہیں جانتے کہ گھر کا مالک کب آئے گا، شام کو، یا آدھی رات کو، یا مرغے کے وقت، یا صبح کو۔ 36 وہ اچانک آکر آپ کو سوتے ہوئے نہ پائے۔ 37 جو میں آپ سے کہتا ہوں، میں سب سے کہتا ہوں: ‘دیکھو!’

_______________________________________________________________

This entry was posted in اردو and tagged . Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.